Asaasi Quwwaton ki yakjai

Asaasi Quwwaton ki yakjai pdf book by Dr Abdul Salaam, Translated by Dr Anees Alam








Asaasi Quwwaton ki yakjai pdf book by Dr Abdul Salaam, Translated by Dr Anees Alam

اساسی قوتوں کی یکجائی

کبھی کبھار سائنس بظاہر مختلف النوع مظاہر کو یکجا کرنے میں کامیاب ہو جاتی ہے۔ یہ یکجائتیں سائنس کے سب سے زیادہ متاثر کرنے والے کارناموں میں سے ہیں۔ یکجائیت کا مطلب اس ضمن میں یہ سمجھنا ہے کہ بظاہر مختلف اثرات کس طرح درحقیقت ایک ہی اساسی شے کے اظہار ہیں۔ مثال کے طور پر انیسویں صدی میں برق اور مقناطیسیت کو یکجا کیا گیا۔ یہ دونوں ظاہراً تو مختلف ہیں لیکن بڑے ہی قریبی انداز میں باہم ملے ہوئے ہیں۔اور عام حالات میں انہیں ایک دوسرے کے بغیر تصور میں لانا ممکن نہیں ہے۔
طبیعیات کے میدان میں اس صدی کی یکجائتوں میں سے ایک برقناطیسیت کا کمزور (نیوکلیائی) قوت کے ساتھ اتحاد ہے۔ یہ دونوں قوتیں ظاہراً بالکل مختلف ہیں۔ برقناطیسیت ایٹمی سے فلکیاتی ہر فاصلے پر فعال ہے۔ اس برخلاف کمزور قوت صرف ایٹمی نیو کلیوں کی گہرائیوں (مثال کے طور پر) میں تابکاری کے مظہر کی علت ہے۔ اس یکجائیت کا سہرا بڑی حد تک تین لوگوں کے سرہے۔ شیلڈن گلاشو، عبدالسلام اور سٹیون وائین برگ۔ انہوں نے دو برطانوی طبیعیات دانوں پیٹرہگز اور ٹام کبل کے ابتدائی نظری خیالات کو استعمال کیا۔ آخر کار ایک ولندیزی نظری طبیعیات دان انہیں معمول کے طریقوں سے استعمال کر سکے۔ ان سب کے تجربی مضمرات (یہ تجربات کامیاب رہے ہیں اور انہوں نے سلام کے نظریہ کی تصدیق کر دی ہے) آج کل سرن، فرمی لیب اور سٹین فورڈ کے نئے اونچے درجے کی توانائی کے کولائیڈروں میں ٹیسٹ کئے جا رہے ہیں۔ طبیعیات کی ایک بالکل نئی شاخ جنم لے رہی ہے  بالکل اسی طرح جس طرح پچھلی صدی میں برقناطیسیت نے جنم لیا تھا۔
اس جلد میں عبدالسلام ، جو الیکٹروویک یکجائیت کے دریافت کنندوں میں سے ایک ہیں، ماضی اور حال کی طبیعیات میں یکجائتوں کے بارے میں لکھتے ہوئے مستقبل کی امیدوں کو بیان کر رہے ہیں۔ یہ ساری مہم جوئی کوانٹم میکانیات کے فریم ورک میں کی جارہی ہے جس کے بڑے معماروں میں ایک عظیم برطانوی سائنس دان پال ڈیراک تھا۔ یہ جلد ایک ڈیراک میموریل لیکچر پر مبنی ہے جو کیمبرج یونیورسٹی میں 1988 میں دیا گیا تھا۔
سلام اور الیکٹروویک نظریہ کے دوسرے لکھاریوں نے کوانٹم نظریہ کے اندر رہتے ہوئے ہی اپنا کام تما کیا کوانٹم نظریہ کا فریم ورک اس صدی کے پہلے نصف  میں وضع ہوا تھا۔ اس نظریہ کے عظیم بانیوں میں سے ورنر ہائزن برگ اور پال ڈیراک تھے۔ ان دونوں کا ایک ایک لیکچر بھی اس جلد میں شامل کیا گیا ہے۔ یہ بھی سلام کے لیکچر کی طرح تخلیقی نظری طبیعیات دانوں کے خیالات کے بارے میں سحر آفریں بصیرتیں فراہم کرتےہیں۔



Download this Book


Or


Read Online